لاہور: پی سی بی کا نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں چار روزہ لیول ٹو کوچنگ کورس ختم ہوگیا۔ قومی کپتان مصباح الحق کا کہنا تھا کہ اس کورس کے دوران انہیں علم ہوا کہ وہ دوسروں کو کیا کچھ سکھا سکتے ہیں کیونکہ کرکٹ کھیلنا اور کوچنگ بالکل مختلف کام ہیں اور کوئی بھی کھلاڑی اپنی غلطی کو محسوس تو کر سکتا ہے لیکن اسے دوسروں کو سمجھانا مشکل ہو جاتا ہے لہٰذا اب ان کی کوشش ہوگی کہ جو کچھ کورس کے دوران سیکھا اس تجربے کے سہارے دوسروں کو بھی کوچنگ کے دوران معلومات فراہم کی جائیں۔واضح رہے کہ لیول ٹو کورس میں سعید اجمل، باسط علی،عمر گل، سلمان بٹ، احمد شہزاد، عبدالرحمان، اعزاز چیمہ، ہمایوں فرحت، بلال آصف، احسان عادل، قیصرعباس، عمید آصف، ذوالفقار بابر اور عدنان اکمل نے بھی شرکت کی۔سابق کپتان سلمان بٹ نے کورس کو اچھا تجربہ قرار دیتے ہوئے اعتراف کیا کہ اب اندازہ ہوا کہ کوچز انہیں سکھانے کیلئے کتنی محنت کرتے ہیں جو آسان کام نہیں ہے ۔ سابق ٹیسٹ کرکٹر باسط علی کا کہنا تھا کہ کوچنگ کورسز کی اہمیت سے انکار ممکن نہیں جن سے بہت سی نئی باتوں کا علم ہوتا ہے ۔عمر گل نے واضح کیا کہ اب وہ بھی دوسروں میں موجود خامیوں کے بارے میں بتا سکتے ہیں کہ انہیں کیسے دور کیا جا سکتا ہے ۔ سعید اجمل نے اعتراف کیا کہ کوچنگ کی جو تیکنیک یہاں سکھائی گئی اس سے انہیں پہلے کوئی آگاہی نہیں تھی۔عدنان اکمل ،احمد شہزاد اور دیگر کھلاڑیوں کا بھی یہی کہنا تھا کہ ایسے کوچنگ کورسز سے کھلاڑیوں کو اپنی مشکلات پر قابو پانے میں مدد ملتی ہے ۔