اسلام آباد،جدہ: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان کا امن و استحکام، حرمین شریفین کی مقدس سر زمین کے امن و استحکام سے منسلک ہے ، اس مقدس سر زمین کی حرمت یا سلامتی کو کوئی خطرہ درپیش ہوا تو پاکستان سعودی عرب کاساتھ دیگا، یہ بات انہوں نے جدہ میں اپنے سعودی ہم منصب ڈاکٹر ابراہیم بن عبدالعزیز العساف سے خصوصی ملاقات کے دوران کہی۔ دفتر خارجہ کے مطابق ملاقات کے دوران دو طرفہ تعلقات، خطے کی صورتحال سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان نے پاکستانیوں کے دلوں میں گہرے انمٹ نقوش چھوڑے ہیں جبکہ سعودی ولی عہد کی طرف سے سعودی عرب کی جیلوں میں قید 2107 قیدیوں کی رہائی کے اعلان نے عوام کے دل جیت لئے ۔ وزیر خارجہ نے اپنے سعودی ہم منصب سے گزارش کی کہ ان قیدیوں کی جلد رہائی کیلئے اقدامات کیے جائیں۔انہوں نے پلوامہ واقعہ کے بعد پاک بھارت کشیدگی کے دوران سعودی عرب کے مصالحانہ کردار کو سراہتے ہوئے مطالبہ کیا کہ او آئی سی میں بھارت کی شمولیت کسی بھی حیثیت میں قابلِ قبول نہیں۔وزیر خارجہ نے اپنے سعودی ہم منصب کو سعودی عرب میں مقیم ورک فورس اور طلباء کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا،جس پر سعودی وزیر مملکت انہیں پاکستانی کمیونٹی کو درپیش مسائل کے جلد حل کیلئے ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مصر کے صدر اور وزیر خارجہ سے بھی ملاقات کی۔ وزیر خارجہ نے مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے دوبارہ صدر منتخب ہو نے اور مصر کو افریقن یونین کی چیئرمین شپ سنبھالنے پر مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے کہا مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے دورہ پاکستان کے منتظر ہیں، امید ہے وہ جلد پاکستان تشریف لائیں گے ،مصری وزیر خارجہ نے پاکستان کے وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کو دورہ مصر کی دعوت دی۔فریقین نے پاکستان اور مصر کے درمیان دو طرفہ تجارت کا حجم بڑھانے پر اتفاق کیا۔ مزیدبرآں وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی نے انڈونیشیاکی ہم منصب سے ملاقات کی ،جس میں ‘‘مشترکہ اقتصادی کمیشن’’کو ازسرنو فعال بنانے پر اتفاق کیا گیا۔قبل ازیں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مکہ مکرمہ میں عمرہ ادا کیا اور ملکی سلامتی ، ترقی و خوشحالی کیلئے خصوصی دعائیں کیں ۔ وزیرخارجہ