کراچی: ورلڈ کپ 2019 کیلئے قومی ٹیم کو آئی سی سی کی جانب سے ملنے والے اعزازی ٹکٹوں کے معاملے پر کھلاڑیوں اور پی سی بی میں اختلاف پیدا ہو گیا۔ذرائع کے مطابق ورلڈ کپ میں قومی ٹیم کے پندرہ کھلاڑی اور دس آفیشلز آئی سی سی کے مہمان ہیں اور ان 25 افراد کو گورننگ باڈی ہر میچ میں ایک ایک ٹکٹ جاری کرے گی یعنی پی سی بی کو 25 اعزازی ٹکٹس ملیں گے جن پر کھلاڑی اور آفیشلز اپنے احباب یا رشتے داروں کو میچز دکھا سکتے ہیں۔ ذرائع کے مطابق ٹیم منیجر طلعت علی نے کھلاڑیوں پر یہ بات واضح کردی کہ پی سی بی کو ہر میچ کے دوران پندرہ ٹکٹس درکار ہوں گے جبکہ باقی دس ٹکٹس کھلاڑی آپس میں تقسیم کر سکتے ہیں جس پر قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی ناراض ہیں کہ اگر انہیں اتنی کم تعداد میں ٹکٹس ملے تو وہ کس طرح اپنی فیملی یا دیگر احباب کو میچز دیکھنے کا موقع فراہم کرسکیں گے ۔اس حوالے سے دباؤ میں مبتلا کرکٹرز کا موقف ہے کہ اگر بورڈ کو ٹکٹوں کی اتنی زیادہ ضرورت ہے تو وہ آئی سی سی سے براہ راست ٹکٹس خریدے جیسے کہ بورڈ کے سابق سربراہوں نے چیمپئنز ٹرافی کیلئے ٹکٹ خرید کر اپنے مہمانوں کو دیئے تھے ۔