اسلام آباد:  وزیراعظم کی معاون خصوصی فردوس عاشق نے کہا ہے کہ حکومت سول کورٹ سے لے کر سپریم کورٹ تک دیوانی مقدمات کا فیصلہ دو سال تک کرنےکی قانونی شرط لاگو کی جا رہی ہے۔اپنے ٹویٹ میں فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ حقیقی تبدیلی کی طرف بڑھتے ہوئے کوڈ آف سول پروسیجر میں تبدیلی کا بل موجودہ حکومت کا مثبت قدم ہے۔ اس سے پہلے ایک نسل مقدمہ درج کرتی اور تیسری نسل میں اس کا فیصلہ ہوتا تھا۔انہوں نے کہا کہ سمن کے اجراء، وصولی اور عدالتی حاضری سے لے کر شہادتیں ریکارڈکے عمل کو جدید ٹیکنالوجی سے منسلک کیا جا رہا ہے۔ معاون خصوصی کا مزید کہنا تھا کہ سستے اور فوری انصاف کی فراہمی پاکستان تحریک انصاف کا بنیادی نظریہ اور وزیراعظم عمران خان کا مشن ہے۔