کابل:  افغانستان کے دارالحکومت کابل میں یکے بعد دیگر دھماکے ہوئے، جس کی وجہ سے صدارتی امیدوار عبدالطیف سمتی 14 افراد زخمی ہو گئے۔ترجمان افغان وزارت داخلہ نصرت رحیمی نے کہا ہے کہ کابل میں جاری سیاسی تقریب میں چار مارٹر گولے فائر کیے گئے۔انہوں نے کہا کہ مارٹر گولے ایک گھر سے فائر کیے گئے تھے جب کہ فائر کرنے والے ملزم کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔افغان میڈیا کے مطابق کابل کے علاقے پولیس ڈسٹرکٹ 13 میں متعدد دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں جبکہ دھماکوں کے بعد ملزمان کی جانب سے فائرنگ کا سلسلہ بھی جاری تھا۔افغانستان کے چیف ایگزیکٹیو (سی ای او) عبداللہ عبداللہ نے دھماکوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ کابل میں ایک سیاسی تقریب جاری تھی جہاں یہ دھماکے کیے گئے ہیں۔افغان میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ کابل میں جاری تقریب میں 10 دھماکوں کی آوازیں سنی گئی ہیں جبکہ وقفے وقفے سے فائرنگ کا سلسلہ بھی جاری رہا۔ تقریب میں اہم عہدیدار بھی شریک تھے جو علاقہ سے نکلنے کی کوشش کر رہے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق دھماکوں میں زخمی ہونے والوں کو ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے۔